نظر

ایک روز ہم ڈیرے پر بیٹھے ہوئے تھے ۔ میں نے اپنے بابا جی سے پوچھا " جناب ! دنیا اتنی خراب کیوں ہوگئی ہے۔ اس قدر مادہ پرست کیوں کر ہو گئی ہے " ۔ 
بابا جی نے جواب دیا ! " دنیا بہت اچھی ہے ۔ جب ہم اس پر تنگ نظری سے نظر ڈالتے ہیں تو یہ ہمیں تنگ نظر دکھائی دیتی ہے ۔ جب ہم اس پر کمینگی سے نظر دوڑاتے ہیں تو یہ ہمیں کمینی نظر  آنے لگتی ہے ۔ جب اسے خود غرضی سے دیکھتے ہیں تو یہ خود غرض ہو جاتی ہے ۔ لیکن جب اس پر کھلے دل ، روشن آنکھ اور محبت بھری نظر سے نگاہ دوڑاتے ہیں تو پھر اسی دنیا میں کیسے پیارے پیارے  لوگ نظر  آنے لگتے ہیں "۔
اشفاق احمد زاویہ 3 خدا سے زیادہ جراثیموں کا خوف صفحہ 227