معدوم

مجھے خیال آیا اور ایک مقام پر میں نے سوچا کہ شاید میں " زاویہ " پروگرام کی نسبت  بہتر  طور پر آپ کی خدمت کر سکتا ہوں  اور کسی ایسے مقام پر پہنچ کر آپ کی دستگیری کروں جہاں پر مجھے پہنچ جانا چاہیے تھا ۔ لیکن یہ خیال باطل تھا اور یہ بات میرے نزدیک درست نہیں تھی ۔ لیکن اس کا احساس مجھے بہت دیر میں ہوا  کہ جو شخص جس کام کے لیے پیدا ہوتا ہے ، بس وہی کر سکتا ہے اس سے بڑھ کر کرنے کی کوشش کرے تو معدوم ہو جاتا ہے ۔ میں آئندہ کے پروگراموں میں شاید اس بات کا ذکر کروں کہ میں آپ کے بغیر اور آپ کی معیت کے بغیر اور آپ سے دور  کس طرح معدوم ہوتا ہوں ۔ 

اشفاق احمد زاویہ 2 بشیرا صفحہ 119