دولت کے انبار

دولت کا انبار کھاد اور کوڑے کے ڈھیر کی مانند ہے ۔ جس شخص کے پاس یہ ڈھیر جمع رہتا ہے  ، اس کے وجود سے اس کے گرد و نواح  اور اس کی سانسوں سے  بدبوکے بھبھاکے آتے رہتے ہیں ۔لیکن جونہی کھاد کا یہ ڈھیر دور دور بکھیر دیا جاتا ہے اور آسمانوں سے اس پر شبنم کا نزول ہوتا ہے تو اس میں سے خوبصورت رنگوں والے  خوشبو دار پھول پیدا ہوتے ہیں  جن کی خوشبو سے ساری کائنات مہکنے لگتی ہے ۔
اشفاق احمد  شہرِ آرزو صفحہ 368
بشکریہ : اینجل فاری