پھل

میرا پوتا کہتا ہے کہ " دادا! ہو سکتا ہے درخت ہماری طرح ہی روتا ہو ، کیونکہ اس کی باتیں اخبار نہیں چھاپتا " ۔ میں نے کہا کہ وہ پریشان نہیں ہوتا نہ ہی روتا ہے ، وہ خوش ہے اور ہوا میں جھومتا ہے ۔ کہنے لگا کہ آپ کو کیسے پتہ کہ وہ خوش ہے ؟ میں نے کہا کہ وہ خوش ایسے ہے کہ ہم کو باقاعدگی سے پھل دیتا ہے ۔ جو ناراض ہوگا تو وہ پھل نہیں دے گا ۔ 

اشفاق احمد زاویہ 2 ماضی کا البم صفحہ 44