" منشا "

منشا سرکاری یہی ہے کہ انسان اپنے آپ کو نہ دیکھے ۔ جیسے آنکھ سارے جہاں کو دیکھتی ہے مگر اپنے آپ کو نہیں دیکھ سکتی۔ اسی طرح ناک ہر شے کی خوشبو اور بدبو سونگھتی ہے سوائے اپنے پیٹ کی بد بو کے ۔ ۔ ۔ ۔ ہاں اگر فضلِ خدا شامل حال ہو اور کوئی مردِ خدا اپنے وجود کی سیر کرا دے تو  سبحان اللہ ۔ ۔ ۔  ۔ نور اللہ ۔ ۔ ۔ ۔ ۔

اشفاق احمد بابا صاحبا صفحہ 523