" تھر تھری "


لیکن ایک تلاش ایسی ہوتی ہے کہ آدمی کو اس کا علم ہی نہیں ہوتا کہ وہ تلاش کر رہا ہے یا اس کو کسی چیز کی چنتا ہے یا وہ کوئی راستہ ڈھونڈ رہا ہے یا اسے کسی شے کی تلاش ہے۔پھر بھی یہ عمل جاری رہتا ہے اور مرتے دم تک اس کو اس بات کا سراغ نہیں ملتا کہ وہ اس قدر بے چین کیوں ہے ، خالی کیوں ہے ، اس کی روح کے اندر ایک تھرتھری سی کیوں رہتی ہے۔

 اشفاق احمد سفر در سفر صفحہ نمبر 191