"رسمِ غلامی "

پرانے زمانے میں بچے آزاد کھیلتے تھے اور جب وہ جوان ہوتے تو سردار کی بتائی ہوئی رسم کے مطابق انہیں جنگجو گروہوں مین شامل کر لیا جاتا تھا ۔ اب جب بچہ جوان ہو جاتا ہے تو اس کو ڈگری دے کر اور ملازمت کی رسم ادا کر کے اداروں میں شامل کر لیا جاتا ہے ۔

پرانے زمانے میں جوان کو شکار مارنے ، شکار تلاش کرنے ، اور موقع آنے پر دوسرے قبیلے کے لوگوں کو ختم کرنے کے لیے رکھا جاتا ۔ آج کے زمانے میں اُسے روٹی کما کر لانے ، اس کا ذخیرہ جمع کرنے ، اور مدِ مقابل کو شکست دے کر اپنے لیے نئی راہیں پیدا کرنے پر متعین کیا جاتا ہے ۔

اشفاق احمد زاویہ 3 کارپوریٹ لائف  صفحہ 298