" لقمہ "

آپ منہ میں روٹی کا ایک لقمہ رکھ کر تین دن گھومتے رہیں وہ آپ کی نشو و نما کا باعث نہیں بن سکے گا جب تک کہ وہ آپ کے معدے میں نہ اتر جائے ۔ اور معدے میں اتر کر آپ کے خون کا حصہ نہ بن جائے ۔ اور پھر آپ کو تقویت عطا ہوتی ہے ۔ میں آپ اور ہم سب منہ کے اندر رکھے علم کو ایک دوسرے پر اگلتے رہتے ہیں ۔ اور پھینکتے رہتے ہیں ۔ پھر اس بات کی توقع رکھتے ہیں اور وسچتے ہیں کہ ہم کو اس سے خیر کیوں حاصل نہیں ہوتی ۔

اشفاق احمد  زاویہ 2 عالم اصغر سے عالم اکبر تک  صفحہ 147