" قدرِ مشترک "

جب دولت پر دولت ٹھونسی جائے ، نکاسی کے راستے بند کیے جائیں تو جان لیوا قبض ہو جاتی ہے ۔ دولت کو جمع کرتے جائیں تو بدبو دار روڑی بن جاتی ہے ۔ اور اسی روڑی کو بکھیر دیں تو اعلیٰ درجے کی کھاد بن جاتی ہے ۔ اسی طرح دولت بکھرتی رہے تو اچھا ہے لیکن دولت میں اور شٹ میں میں ایک ہی قدر مشترک ہے ۔ کہ دونوں ہی خوشحالی کے ضامن ہوتے ہیں ایک معاشرے میں اور ایک کھیت میں ۔ 
 
اشفاق احمد بابا صاحبا صفحہ 595