نظرانداز کرکے مرکزی مواد پر جائیں

پیسے کی عزت

تو خواتین حضرات، ہم نے اس پر کبھی غور نہیں کیا کہ لوگوں کو پیسے کی، روپے کی ضرورت نہیں ہوتی جتنی کہ احترام کی، عزت نفس کی، توقیر ذات کی ہوتی ہے اور ہمارے ملک میں بدقسمتی سے اس کا رواج بہت کم ہے اور ہم نے اس بات پر کبھی توجہ نہیں دی۔ آپ حیران ہو کر سوچتے ہوں گے کہ جو لوگ پیسہ کماتے ہیں، چراتے ہیں، رشوت لیتے ہیں۔۔۔ ہم نے ان سے پوچھا کہ کیا وجہ ہے جو آپ ایسا کرتے ہیں تو انھوں نے کہا، ہم بہت سارا روپیہ لے کر، اکٹھا کر کے اس سے عزت خریدتے ہیں۔ اور اگر ہم صاحبان عزت کو ان کا جائز مقام دیں بلکہ انھیں زیادہ زچ کریں تو شاید وہ ایسا سوچیں بھی نہیں۔ زچ کرنے کا مطلب آپ ان سے کہیں کہ وہ ایسا کر ہی نہیں سکتے،آپ جیسا نیک، باوقار صاحب عزت اس قبیح فعل کا مرتکب نہیں سکتا تو وہ سوچنے پر مجبور رہے گا اور عرصہ بعد وہ ایسا نہیں ہو گا۔۔۔ جیسا اب ہے۔
 زاویہ سے اقتباس
بشکریہ: عابد علی وثیر عابد

تبصرے