نظرانداز کرکے مرکزی مواد پر جائیں

توبہ

رات چھائی اور شامیانے سے قرات بلند ہوئی۔ دودھ سی چاندنی، اس بے شمار بلب، پھولوں سے لدے، 'دونوں دولہا براتیوں کے درمیان گیندے کے ڈھیر دکھائی دیتے تھے۔ قاضی صاحب سورتوں پر سورتیں پڑھتے چلے جا رہے تھے۔ میں ابھی اپنی جعفری میں رہا۔ چاند اور بلبوں کی ملی جلی روشنی جعفری میں منعکس تھی۔ نہ بہت اندھیرا تھا نہ چندھیانے والا اجالا۔ ایسا معلوم ہوتا تھا جسے چاند پر سرمئی چادر ڈال کر اس روشنی سے دیواروں پر سفیدی کر دی ہو۔ میں بوٹوں اور کوٹ سمیت چارپائی پر دراز تھا۔ رضائی عرضاً اوڑھ رکھی تھی۔ منہ اور پاؤں ننگے تھے۔





ابھی ایک سگریٹ پیا تھا اور ابھی ایک اور پینے کو جی چاہتا تھا کہ دروازے کے پاس ایک سایہ جھلملایا۔ لیکھا ہی تو تھی۔ میں نے آنکھیں بند کر لیں۔ وہ آہستہ سے اندر داخل ہوئی۔ مجھے لیٹا دیکھ کر گھبرا گئی۔ پھر آگے بڑھی، چارپائی کے قریب آ کر ذرا جھکی اور پھر سیدھی کھڑی ہو گئی۔ 'دو بھائیوں کا نکاح ہو رہا ہے اور جناب یہاں بوٹ سوٹ پہنے سو رہے ہیں' ہولے سے کھانس کر اس نے منہ ہی منہ میں یہ کہا اور پھر تپائی کی طرف دیکھنے لگی۔ لٹکتے ہوئے دوپٹے کو کندھے پر پھینک کر اس نے سگریٹ کی ڈبیا اور ماچس اٹھائی، ایک سگریٹ نکالا اور دیا سلائی جلا کر سگریٹ سلگانے لگی۔ اس ننھی سی لو میں اس کا چہرہ میں نے آنکھ کی جھری میں سے دیکھا جیسے الحمرا کے کسی بڑے دالان میں ایک بجھتی ہوئی موم بتی کے آگے کوئی لیکھا الف لیلہ پڑھی رہی ہو۔ ایک چھوٹا سا کش کھینچ کر اس نے کلے پھلائے اور پھر فوراً سانس چھوڑ دیا۔ ذرا سی دیر مجھ کو دیکھا۔ پھر ایک اور کش لیا اور ذرا جھک کر سارا دھواں میرے منہ میں دھکیل دیا۔ شاید ایک دفعہ پھر ایسے ہی ہوتا مگر نکاح کے چھوہارے اوپر اچھل کر شامیانے کی چھت سے جا ٹکرائے۔ مبارکباد کی صدا بلند ہوئی۔ باجا زور سے بجا۔ سب اٹھ کھڑے ہوئے۔ وہ سٹ پٹائی۔ جلتا ہوا سگریٹ تپائی پر پھینک پر برآمدے میں بھاگ گئی۔





میں اٹھ بیٹھا۔ اس دھندلی روشنی میں بجری کے کے غالیچے پر ننگے پاؤں کے تین نشان بے ترتیب بوسوں کی طرح پڑے تھے۔ میں نے تپائی پر سے سلگتا ہوا سگریٹ اٹھا کر اسے دیکھا۔ کارک والی جگہ گیلی تھی۔ میں نے اسے ہونٹوں میں دبایا۔ کش نہیں کھینچا اور پھر سگریٹ بجھا لیا اور رومال میں لپیٹ کر کوٹ کی اندرونی جیب میں رکھ لیا۔ پھر پاسنگ شو کی باقی ماندہ سگریٹ معہ ڈبیا مروڑ تروڑ کر جعفری کے موکھے میں دور دور تک پھیلی ہوئی دودھیا چاندنی میں پھینک دیے۔
-ختم شد-