نظرانداز کرکے مرکزی مواد پر جائیں

مرقد


مرد کو تو خدا سے وصال کا شوق روز ازل سے ہے، لیکن ہم عورتیں کہاں جائیں؟ ہم کس دیوار سے سر پھوڑیں اور کس کا سہارا پکڑیں؟ ہم تو یہیں کہیں اسی دنیا میں۔۔۔ کسی کے خیال میں۔۔۔ کسی کے تصور کے بازوؤں میں دفن ہو جانا چاہتی ہیں اور ہمیں وہ مرقد بھی نصیب نہیں ہوتا۔
(اشفاق احمد - من چلے کا سودا)